fbpx
خبریں

ثبوت ہونگے تو الیکشن کمیشن نتائج تبدیل کرسکتا ہے، کنور دلشاد

الیکشن کمیشن کے سابق سربراہ کنور دلشاد نے کہا ہے کہ الیکشن کمیشن کے سامنے درست ثبوت ہونگے تو نتائج تبدیل کرسکتا ہے۔

اے آر ائی کے پروگرام دی رپورٹرز میں گفتگو کرتے ہوئے سابق سیکرٹری الیکشن کمیشن کنور دلشاد کا کہنا تھا کہ یہ منفرد الیکشن ہے جس میں فارم 45 اور فارم 47 کا ذکر ہورہا ہے۔ فارم 45 کی بنیاد پر ہی ریٹرننگ افسر فارم 47 تیار کرتا ہے۔ سب سے اہم دستاویز فارم 45 ہے۔

کنور دلشاد نے کہا کہ الیکشن کمیشن فارم 47 کے مطابق نتائج کا اعلان کرتا ہے۔ ریٹرننگ افسر فارم 45 کی بنیاد پر ہی فارم 47 تیار کرتا ہے۔

انھوں نے کہا کہ آر او فارم 45 کی تصدیق اور تحقیق کے بعد ہی فارم 47 بناتا ہے۔ فارم 45 اور فارم 47 میں فرق پایا جاتا ہے تو آر او کیخلاف کارروائی ہوتی ہے۔

کنور دلشاد کا کہنا تھا کہ فارم 47 فارم 45 سے مطابقت نہیں رکھتا تو وہ ٹیمپرنگ میں آتا ہے۔ ہائیکورٹ میں پٹیشنز گئی ہیں جہاں فارم 45 اور فارم 47 میں ٹیمپرنگ کا پتہ چل جائیگا۔

انھوں نے کہا کہ الیکشن کمیشن کے سامنے درست ثبوت ہونگے تو وہ نتائج تبدیل کرسکتا ہے۔ آر او نے فارم 47 میں ٹیمپرنگ کی ہے تو ان کیخلاف محکمانہ کارروائی ہوگی۔

Comments




Source link

Facebook Comments

رائے دیں

Back to top button